محکمہ انٹی کرپشن راولپنڈی کا دفتر کرپٹ ملازمین کو تحفظ فراہم کرنے لگا

ضلع راولپنڈی اور ضلع مری کی مختلف تحصیلوں کی عوام کی بدعنوان اور کرپٹ ملازمین کے خلاف دی جانے والی درخواستیں‌ردی کی نظر ہونی لگیں‌

مری (راجہ افضال سلیم عباسی سے )‌محکمہ انٹی کرپشن راولپنڈی کا دفتر کرپشن کے خاتمے کے بجائے مبینہ طور پر کرپشن کے تحفظ کا محکمہ بن چکا ہے جہاں‌پر کرپٹ اہلکاروں‌، رشوت خوروں‌، بدعنوانی اور دیگر جرائم میں‌ملوث سرکاری اہلکاروں‌کے خلاف کاروائی کے بجائے ان سے مال پانی لے کر ان کے خلاف دی جانے والی درخواستیں واپس کردیتا ہے .محکمہ انٹی کرپشن جس کا قیام ہی کرپشن اور بدعنوانی کے خاتمے اور رشوت کی روک تھام کے لیے تھا مگر محکمہ انٹی کرپشن راولپنڈی کا دفتر اور عملہ اس کے برعکس کام کررہا ہے .زرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ضلع راولپنڈی کی تحصیل کہوٹہ ، ضلع مری کی تحصیل مری ، تحصیل کوٹلی ستیاں کی عوام کی جانب سے بدعنوان اور کرپٹ پٹواریوں اور دیگر محکموں کے بدعنوان ملازمین کے خلاف دی جانے والی درخواستوں پر محکمہ کے افسران کوئی کاروائی کرنے کے بجائےمبینہ طور پر ان کرپٹ ملازمین سے خرچہ پانی لے کر درخواستٰیں ہی دبا لیتے ہیں اور ان کرپٹ ملازمین کے خلاف کوئی کاروائی نہیں‌کی جاتی .زرائع کے مطابق تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال مری کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر عبدالسلام نے اپنی دوبارہ تعیناتی کے بعد جب ہسپتال کی جانچ پڑتال کی تو انھیں ڈائلائس مشین غائب ہونے کا علم ہوا اس پر انھوں‌نے مری پولیس کو درخواست دی مگر انھوں نے کاروائی کرنے کے بجائے محکمہ انٹی کرپشن کو درخواست دینے کی کہا اس محکمہ انٹی کرپشن کو درخواست دی گئی مگر مبینہ طور پر علم ہوا ہے کہ کچھ ملازمین کو اس درخواست میں نامزد بھی کیا گیا مگر محکمہ انٹی کرپشن نے ان ملازمین کو دو تین دفعہ اپنے دفتر کے چکر لگوانے کے بعد مشین چوری کا معاملہ ہی دبا لیا اور نہ تو نامزد ملازمین کے خلاف کوئی کاروائی ہوئی اور نہ ہی مشین برآمد ہوسکی اس پر مبینہ طور پر مزید دو مشینیں‌پراسرار طور پر غائب ہوگئیں‌،یہ خبر جب سوشل میڈیا کے زریعے عوام تک پہنچ تو ان کا شدید ردعمل سامنے آیا اور انھوں نے فوری طور ان چوروں‌کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا جبکہ کچھ لوگ اس کو موجودہ ایم ایس ڈاکٹر عبدالسلام عباسی کی ساکھ کو خراب کرنے کے لیے کرپٹ ملازمین کی سازش قرار دے رہے ہیں‌.دوسری جانب محکمہ پولیس مری نے دو مشینوں‌اور ایک ایل ای ڈی کی چوری کی نامعلوم چوروں‌کے خلاف ایف آئی درج کرلی ہے مگر ابھی تک نہ تو مشینوں‌کا علم ہوسکا اور نہ ہی چوروں‌کے خلاف کوئی کاروائی ہوسکی .

اپنا تبصرہ بھیجیں