یاسمین راشد کو کیس سے عجلت میں کیا گیا، عطا تارڑ

اسلام آباد: وزیراعظم نواز شریف کے معاون خصوصی عطا تارڑ کہتے ہیں کہ آئی پی آئی رہنما یاسمین راشد کو ہاؤس حملہ کیس میں عجلت میں بریفنگ۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق مسلم لیگ ن کے رہنما عطاء تارڑ نے نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ یاسمین راشد کو عدالت کی جانب سے ریلیف دیا گیا، ان کا کیس غیرقانونی طور پر ڈسچارج کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ یہ غلط ہے کہ یاسمین راشد کا نام ایف آئی آر میں نہیں تھا، ایف آئی آر کے دوسرے صفحے پر ان کا نام درج ہے۔

عطا تارڑ نے کہا کہ فرانزک رپورٹ میں یاسمین راشد نے موقع پر موجود ہونے کا موقع دیا، فرانزک رپورٹ عدالت میں جمع کروانی تھی لیکن انتظار نہیں کیا گیا تھا اگر قانون تقاضے کرنے کے لیے تھے تو رپورٹ کا انتظار کیا جانا، دیکھنا چاہیے تھا۔ دستاویزات میں یاسمین راشد کا نام شامل ہے، قانون اور انصاف بھی ہوتا ہے۔

لیگی رہنما نے کہا کہ 9 مئی ملکی تاریخ کے سیاہ ترین دن، منصوبہ بندی کے تحت املاک پر حملہ کیا گیا، لیڈران کی شکست پر شرپسندوں نے کارروائی کی، حملہ آوروں کو گرفتار کیا تو شرپسندوں نے جلاؤ گھیراؤ کیا۔

عطاء نے کہا کہ 9 مئی کے تاریک واقعات میں پرویز الٰہی اپنے کیس میں پیروی کروں گا، یہ کیس شہزادہ اکبر کے صدر نہیں ہوئے، ہم ان کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔

تبصرے

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں