جیٹھا لال نے ‘کامیڈی سرکس’ میں کام کرنے سے کیوں؟

ہندوستانی ٹیلیوژن کا مزاحیہ کام ‘تارک مہتا کا الٹا چشمہ’ کے معروف اداکار دلیپ جوشی (جیٹھا لال) نے کامیڈی سرکس میں کام کرنے سے بڑی وجہ بیان کی۔

انہوں نے ایک انٹرویو میں اپنی زندگی کی تلخ یادوں کا تذکرہ کیا، ان کا کہنا تھا کہ طاقت کے ملک میں اپنے اصولوں پر کبھی نہیں سمجھتا۔

دلیپ جوشی کا کہنا تھا کہ سال 2007 میں ایک ڈرامہ فون کا کام ختم ہو گیا تھا پھر ایک ٹی وی سیریل کی بندش، پہلی بار میری زندگی میں یہ وقت آیا جب مجھے کوئی کام کرنے کے لیے آرہے تھے۔

میرے دو اور تعلیمی ادارے ہیں لیکن دوسرے بچے آگے بڑھ رہے ہیں میرے پاس کوئی کام نہیں ہے۔ یہ بہت مشکل دور۔ برابری تک رسائی حاصل کرنے کے بعد مجھے کوئی احساس نہیں تھا کہ مجھے کس لائن میں جانا چاہیے کیونکہ اس کے علاوہ کچھ نہیں ملتا۔

ان دنوں مزاحیہ پروگرام ‘کامیکس’ کی پیشکش ہوئی تھی لیکن اس میں اسکرپٹ دیکھنے کے بعد اسے دیکھنے کے لیے مجھے اس کے معیار کے مطابق نہیں تھا۔

انہوں نے اپنی بات جاری کرتے ہوئے بتایا کہ مجھے رقم کی ضرورت تھی اور تب ہی مجھے کام کی پیش کش کی ضرورت تھی۔

دلیپ نے بتایا کہ کامیڈی سرکس کے زیادہ تر لطیفے کافی غیر معیاری تھے اور وہ اچھے معاوضے کی ادائیگی بھی کر رہے تھے لیکن میں سوچا کہ اس کا کام کبھی نہیں کیا کیونکہ میں ہمیشہ اس بات پر مدنظر رکھا۔ مجھے کام کرنا دیکھنا میرے سب گھر والے مل کر دیکھ رہے ہیں اور میں بھی اس پر مجھے فخر ہے تو اس میں ایسا ہی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ خدا کے فضل سے کامیڈی سرکس سے ڈیڑھ ماہ کے اندر اسٹ کام تارک مہتا کا الٹا چشمہ کی پیشکش ہوئی جو میرے لیے کسی معجزہ سے کم نہیں۔

واضح رہے کہ کام تارک مہتا کا الٹا چشمہ سال 2008 سے ٹیلی ویژن پر کامیابی سے چل رہا ہے اور دلیپ جوشی سے ہی شو کا ایک اہم حصہ ہے۔

تبصرے

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں