پنجاب میں جاپانی زبان کو اعلیٰ تعلیمی نصاب میں شامل کرنے کا فیصلہ

پی ایچ ای سی ڈاکٹر شاہد منیر نے اپنے دفتر میں تصویر کھنچوائی۔ – PHEC ویب سائٹ
  • پی ایچ ای سی کے چیئرمین ڈاکٹر شاہد منیر اعلان کر رہے ہیں۔
  • ان کا کہنا ہے کہ اس فیصلے سے جاپان کے ساتھ آزاد تجارتی شراکت داری میں آسانی ہوگی۔
  • ڈاکٹر منیر کا کہنا ہے کہ روزگار کے مزید مواقع پیدا کیے جائیں گے۔

لاہور: پنجاب ہائر ایجوکیشن کمیشن (پی ایچ ای سی) نے جاپانی زبان کو اعلیٰ تعلیمی اداروں کے نصاب کا حصہ بنانے کا فیصلہ کیا ہے، باڈی کے چیئرمین ڈاکٹر شاہد منیر نے جمعہ کو اعلان کیا۔

کی طرف سے شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق خبرایک پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ یہ اعلان پاکستان جاپان سوشیو اکنامک ایسوسی ایشن کی جانب سے پاکستان میں جاپانی زبان کے فروغ کے لیے منعقدہ ایک تقریب کے دوران کیا گیا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر منیر نے کہا کہ پی ایچ ای سی یہ تجویز حکومت کو پیش کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ جاپانی زبان کے فروغ سے جاپان کے ساتھ آزاد تجارتی شراکت داری میں مدد ملے گی جو آٹوموٹیو، الیکٹرانکس اور مشینری جیسی صنعتوں کا مرکز ہے۔

ڈاکٹر شاہد نے کہا کہ تعلیمی انفراسٹرکچر کو بہتر بنانے اور انرولمنٹ کی شرح بڑھانے کے لیے کوششیں جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فنی اور پیشہ ورانہ تعلیم افرادی قوت کے لیے ناگزیر ہے۔

انہوں نے کہا کہ اعلیٰ تعلیمی اداروں میں جاپانی زبان کے فروغ سے پاکستانی گریجویٹس کے لیے مزید ملازمتیں اور روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے اور ساتھ ہی آئی ٹی، انجینئرنگ اور مینوفیکچرنگ کے شعبوں میں تعاون بڑھے گا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں