پشاور پولیس لائنز حملے کا ماسٹر مائنڈ پراسرار طور پر ہلاک – ایسا ٹی وی

پشاور پولیس لائنز حملے کا ماسٹر مائنڈ جماعت الاحرار اور تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کا عسکریت پسند کمانڈر سربکف مہمند پراسرار حالات میں ہلاک ہو گیا ہے۔

دہشت گرد تنظیموں کے درمیان اندرونی اختلافات شدید ہو گئے ہیں اور قوی امکان ہے کہ سربکف کی ہلاکت کا تعلق اندرونی کشمکش سے ہے۔

گزشتہ چند دنوں سے دہشت گردوں کے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر سربکف مہمند کو زہر دینے کی خبریں آ رہی تھیں۔

ٹی ٹی پی کا دہشت گرد عرصہ دراز سے پاکستان مخالف سرگرمیوں میں ملوث تھا۔ انہیں دہشت گردی اور علاقائی امن پسندوں کی علامت سمجھا جاتا تھا۔ سربکف مہمند کا تعلق جماعت الاحرار سے تھا جو کچھ عرصہ قبل ٹی ٹی پی میں ضم ہوئی تھی۔

اطلاعات کے مطابق انضمام کے باوجود دونوں گروپوں کے آپس میں اختلافات تھے جس کی بڑی وجہ بچوں کے اغوا اور استحصال کے لیے علاقوں کی تقسیم تھی۔

سربکف مہمند پشاور پولیس لائنز حملے سمیت دہشت گردی کی متعدد وارداتوں کا ماسٹر مائنڈ تھا۔

کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) اور اس سے منسلک دھڑوں کے درمیان اختلافات شدت اختیار کر گئے ہیں، جس کے نتیجے میں 2022 میں مسلح تصادم اور کئی دہشت گرد کمانڈروں کی ہلاکتیں ہوئیں۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں