ہم اپنے اختیارات کا استعمال بہت آرام سے کرتے ہیں۔

اسلام آباد: مقابلہ عمرعطا بندیال کا کہنا ہے کہ عدالتیں درست ثابت کرنے والوں سے سوالات پوچھتی ہیں اور ہم اپنے اختیارات کا استعمال کرتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق مارکیٹنگ عمرعطا نے ایس پی سپموزیم تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں مصنوعی ذانت کےشعبے میں مہر نہیں ہوں، ملک میں اس تقریب کا انعقاد کیا گیا۔

فیصلہ قانون پاکستان کا کہنا تھا کہ عدالت میں صرف قانون کی عملداری کی بات ہوتی ہے، قانون کی بار بار تشریح کی وجہ سے اس سے تنازعات پیدا ہوتے ہیں، ماہرین کو کی وضاحت کے تنازعات کوخت کرناچاہی۔

ملک عمرعطا بندیال نے کہا کہ ایک قانون کی دو تشریح مسائل پیدا کرتے ہیں، ججزآسانی سے بازار میں میسر نہیں اور کئی امتحانات پڑھتے ہیں۔

آپ نے بتایا کہ ٹریبونل کے نہ بگسےعدالتوں میں شامل ہوتا ہے، جو بھی ریگولیٹر ہے اس کو ایک ٹریبونل بنانا چاہیے، سروس کے معاملات پر سروس ٹریبونل ہوتے ہوئے ہیں لیکن قانون کا سوال ہو یا پھر عوامی معاملات کے معاملات کو۔

عدالت نے کہا کہ عدالت نے کہا کہ ہم قانون کو آئین کے مطابق کر سکتے ہیں، کیا ہمارا قانون کاروبار کے مواقع فراہم کرنے میں مددگار ہے، کاروبار کے مواقع اورصنعتی ترقی سے ملک کی ترقی۔

فوجی عمرعطا بندیال کا مزید کہنا تھا کہ کاروبار کے دوست کو تقسیم کرنا ضروری ہے، آئین کا آرٹیکل 25 منصفانہ وسائل کی کاہے، ہر سبسڈی مانگ رہا ہےسبسڈی حکومت، عدالتی عدالت صرف یہ دیکھ کر یہ سبسڈی بلاامتیاز ہے۔

آپ نے مزید کہا کہ آئی پیزطویل مدت سرمایہ کاری آیانکوئیکین طاقت کے لیے ہوئی تھی، طویل سرمایہ کاری کے لیے ضروری سرمایہ کاروں کو صرف دی گئی ہے۔

اقتصادی بازار نے روز دیا کہ پرائیویٹ بزنس کوپورٹ اور حوصلہ ملک کو فروغ دینے کی ضرورت ہے، کاروبار کی طرف سےمعاشی ترقی کوفروغ ملک، ہمیں بہترگولیٹری سسٹم اور کمرشل ادارے کاوقاربھی ملحوظ خاطررکھنے کی ضرورت ہے۔

آپ کو ضرورت سے متعلقہ عمرعطا بندیال نے کہا کہ ہم نے ایواننگ کے خلاف کارروائی کی ہے جن کو زمین نہیں، عوام کے لیے ریگولیشن کو آسان بنانے کی ضرورت ہے، ہائی کورٹ کی صلاحیتبہتر بننا ضروری ہے، ہائی کورٹ پربوجھ کمہوگا۔

تبصرے

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں