حکومت نے پی ٹی آئی بات سے صاف کہہ دیا۔

لاہور: آپ نے مولانا سعد رفیق پاکستان تحریک انصاف کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ جب ہم نے بات کی، سب کا فیصلہ ہو گیا تو آپ نے ناکام بنا دیا۔

سعدرفیق نے کور کمانڈر ہاؤس لاہور (جناح ہاؤس) کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ اختلاف کی بات چیت کرنا چاہیے، آئی کی ٹیم سے وزیر اعظم کی بات فیصلہ کرنا تھی۔ عمران خان کے پاس تو انہوں نے کہا کہ ٹیم نے بات چیت بند کر دی، ہم نے بات چیت کی اور ماحول پیدا کیا اور اسے ناکام بنا دیا۔

سعد رفیق نے کہا کہ عمران خان کمیٹی نے تو بنا دیا لیکن اب ان سے بات کون کرے گا؟ ہم اس بات سے بات نہیں کر سکتے

9 مئی کے واقعات پر گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عمران خان نے نوجوان کو گمراہ کرنے کی کوشش کی، جوانوں کو آلودہ کر دیا، پی ٹی آئی کو پسند آئی کہ جناح ہاؤس کو جلایا، اس کے گھر کے حوالے سے تاریخی پہلوؤں سے قائد اعظم بہت سی جگہ پر واقع ہے، 9 مئی کو ظالموں نے ہر چیز کو آگ لگائی۔

متعلقہ: حکومت سے مذاکرات کے لیے کمیٹی تشکیل، کون کون شامل ہیں؟

انہوں نے کہا کہ 9 مئی کے واقعات کی منصوبہ بندی کے تحت، مسلح افواج ہماری سرحدوں کی محافظ ہیں، دنیا میں کوئی اپنی فوج کو شرمندہ نہیں کر رہا ہے، کمانڈر ہاؤس پر 3 اطراف سے حملہ کیا گیا، حملہ کرنے والے کس کام میں ہیں۔ کر رہے تھے؟

ان کا کہنا تھا کہ اس عمران خان کو پوری قوم سے معافی مانگنی چاہیے، انہیں پاکستان سے ایک کرنسی چاہئیے، جو بھارت میں نہیں سکا وہ پی ٹی آئی کر رہا ہے۔

عام طور پر انہوں نے کہا کہ واضح ہے کہ حکومت اپنی مدت میں ایک دن سے متعلق نہیں ہے، عام انتخابات اپنے مقررہ وقت میں انتخابات پر ہوں۔

تبصرے

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں