چینی نیوز ایجنسی سے تعلق رکھنے والے صحافیوں کو بھارت چھوڑنا پڑا

نئی دہلی : چینی نیوز ایجنسی ژین وا سے تعلق رکھنے والے صحافی کوبھارت چھوڑنا پڑا، ہندوستانی وزیر خارجہ کی طرف سے چینی صحافیوں کو توسیع نہیں دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق ہندوستان کے حکومتی مخالف رائے رکھنے پر ملک بدری کی جانب سے ہم کو سزا دی گئی، دنیا کی سب بڑی پارلیمنٹ میں آزادی رائے کی کوئی جگہ نہیں، چین کے صحافیوں کے لیے ہندوستان میں کوئی جگہ نہیں۔

چینی خبر رساں ایجنسی سے تعلق رکھنے والے صحافی کوبھارت چھوڑنا پڑ گئے، اطلاعات کے مطابق وزیر خارجہ کی جانب سے چینی صحافیوں کو توسیع نہیں دی گئی۔

ہفتہ کے بعد بھارت میں موجود چینی صحافی اپنے ملک واپس روانہ ہوئے، 1980 میں یہ پہلا موقع ہے کہ بھارت میں کوئی چینی صحافی موجود ہے۔

ہندوستانی وزیر خارجہ کی طرف سے 2020 سے چین کے صحافیوں سے ملاقات کی مدت میں مسلسل دباؤ ڈالی، ہندوستانی وزیر اعظم بھارت میں خطے میں برابری کے لیے پردہ ڈالنے کے لیے آگے بڑھتے ہیں۔

ہندوستانی دنیا کے عوام کے حقوق کی پامالی میں ملوث ہیں جس سے بھر پور شام چل رہے ہیں اور دنیا میں بھی صحافی برادری کی آواز کو دبانے کی کوشش کی ہے تاہم عالمی اداروں کو ہندوستانی حکومت کے فاشسٹ کی مذمت کی ہے۔ ۔

تبصرے

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں