آڈیو لیکس کمیشن کیس، حکومت کا 3 ججوں پر اعتراض – ایسا ٹی وی

وفاقی حکومت نے آڈیو لیکس کمیشن کی سماعت کے لیے بنچ میں 3 ججز کی موجودگی کو چیلنج کر دیا۔ وفاقی حکومت نے چیف جسٹس عمر عطا بندیال، جسٹس اعجاز الاحسن، جسٹس منیب اختر کے خلاف درخواست دائر کردی۔

وفاقی حکومت نے آڈیو لیک کمیشن کے خلاف درخواستوں کے معاملے میں متفرق درخواست جمع کرادی۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ چیف جسٹس عمر عطا بندیال، جسٹس اعجاز الاحسن، جسٹس منیب اختر آڈیو لیک کیس کی سماعت نہ کریں۔ تینوں معزز ججوں نے پانچ رکنی لارجر بنچ میں بیٹھنے سے انکار کر دیا۔

درخواست میں وفاقی حکومت کے آڈیو لیک کمیشن کے خلاف درخواستوں کی سماعت کے لیے نیا بینچ تشکیل دینے کی استدعا کی گئی ہے۔ 26 مئی کو سماعت کے دوران چیف جسٹس کے خلاف اٹھائے گئے اعتراض کو قبول نہیں کیا گیا۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ انکوائری کمیشن کے سامنے آڈیو چیف جسٹس کی خوشنودی سے متعلق ہے۔ عدالتی فیصلوں اور ججز کے ضابطہ اخلاق کے مطابق جج اپنے رشتہ دار کا مقدمہ نہیں سن سکتا۔

درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ ماضی میں چیف جسٹس افتخار چوہدری نے ارسلان افتخار کیس میں خود کو بینچ سے الگ کر لیا تھا۔ مبینہ آڈیو لیکس کا تعلق جسٹس اعجاز الاحسن اور جسٹس منیب اختر سے بھی ہے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں